ماسٹر پلان 2050 کا کام معطل کردیا گیا

ذرائع کے مطابق شہری میاں عبدالرحمان کی درخواست پر لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے سماعت کی جس دوران شہری نے اپنی درخواست میں مؤقف اپنایا کہ لاہور کے زرعی رقبے کو بلاجواز شہری علاقے میں تبدیل کیا گیا، ماسٹر پلان کو منظور کروانے میں ڈیویلپر مافیا ملوث ہے۔ دوران سماعت جسٹس شاہد کریم  نے کہا کہ لاہور کے شہریوں کو مارا جارہا ہے، شہریوں کا سانس لینا تک مشکل ہوچکا ہے، حکومت لاہور میں اسموگ کنٹرول کرنے میں دلچسپی نہیں لے رہی ۔ بعد ازاں عدالت نے چیف سیکرٹری ، ڈی جی ایل ڈی اے، سیکرٹری ماحولیات سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے لاہور کے ماسٹر پلان 2050 پرعملدرآمد معطل کردیا۔

 

Leave A Reply

Your email address will not be published.

ٹول بار پر جائیں