ارکان پارلیمان کی مجموعی دولت میں 85 فیصد اضافے کا انکشاف

ذرائع کے مطابق ارکان صوبائی و قومی اسمبلی کی گزشتہ 5 سال میں مجموعی دولت میں 85 فیصد اضافہ ہوا ہے، اور 1 ہزار 170 ممبران کے مجموعی اثاثے 49 ارب سے بڑھ کر 91 ارب ہو گئے ہیں۔تحقیق کے مطابق 87 فیصد ممبران 9 سال سے پارلیمان کے ممبر ہیں، مالی سال 2019 میں تمام ارکان پارلیمنٹ کی فی کس امدنی میں اوسطاً ایک کروڑ کا اضافہ ہوا ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مالی سال 2015 میں تمام ارکان کے مجموعی اثاثے 49 ارب تھے، اور مالی سال 2018 میں ان کے مجموعی ڈیکلیئرڈ اثاثے 89 ارب تھے۔2019 میں ممبران کے مجموعی اثاثے 79 ارب تھے، سال 2018 سے 2019 میں ممبران کے مجموعی اثاثے 15 فیصد بڑھے، جب کہ ان ممبران نے 2018 میں مجموعی ٹیکس 1 ارب 60 کروڑ روپے اور 2019 میں مجموعی ٹیکس 98 کروڑ روپے دیا، یوں ان ممبران نے 2018 کے مقابلے میں 2019 میں 62 فیصد کم ٹیکس دیا۔29 ارکان نے 5 ارب کے مجموعی اثاثے بیرون ملک بھی بتائے، 25 ارکان اسمبلی نے اپنی جائیدادیں ایک ارب سے زائد کی بتائیں، 71 ممبران کے اثاثے 50 کروڑ سے زائد ہیں۔

 

Leave A Reply

Your email address will not be published.

ٹول بار پر جائیں